جمعہ، 15 جون، 2007

ترقیاں

ارسال کردہ از Muhammad Shakir Aziz بوقت 8:06 AM ,


موج ہوگئی بقول ہمارے ہی


کل سے اصل میں ہمارے فری سرور کو بخار تھا اور نئی پوسٹ نہیں ہورہی تھی.  ہم نے آج صبح ایسے ہی یہ مسودہ اٹھا کر شائع کرڈالا. امید نہیں تھی کہ اب بھی پوسٹ شائع ہوجائے گا. لین ایرر دیئے بغیر یہ شائع ہوگئی. سونے پر سہاگہ نیٹ بند ہے صبح سے چناچہ اس نمونے کو ٹھیک کرنے کا خیال ہی نہیں آیا اور احباب اندازے لگا لگا کر ہلکان ہورہے ہیں.


ویسے یہ ترقیاں کا مقصد حکومت کے بخیے ادھیڑنا ہی تھا جیسا کہ ٹرینڈ ہے آج کل کا.


شاید اردو بلاگنگ میں پہلی بار ہورہا ہے. پوسٹ بعد از تبصرے.

Back Top

4 تبصرے:

  1. شاکر صاحب صفحہ تو بالکل صاف ہے ۔تبصرہ کس چیز پر کریں؟ البتہ صفائی کے 10 نمبر آپ کو پورے دیتا ہوں۔

  2. میرے خیال میں‌یہ حکومتی ترقیاں ہیں جو نظر نہیں آتیں :)

  3. اشفاق احمد اپنی کتاب “زاویہ“ میں ایک آرٹسٹ کا ذکر کرتے بتاتے ہیں کہ جب اُن کی ملاقات اُس سے ہوئی تو اُس نے چند خالی کنوس اُس کو لا کر دیکھائے اور کہنے لگا کہ یہ میری شاہکار تخلیق ہے!! جواب میں اشفاق صاحب اُسے ناسمجھ اور دیوانہ سمجھے اور کہا بھائی اِس پر تو کچھ بھی نہیں بناہوا کیا! کہنے لگا کہ آپ کو آرٹ کی پہچان ہی نہیں جب سے میں نے آرٹ کو سمجھا ہے تب سے ایسی ہی تصاویر تخلیق کر رہا ہوں۔۔۔ اشفاق صاحب لکھتے ہیں کہ میں نے اُس سے کہا تم اپنی زمانہ جہالت (آرٹ میں) کی تصاویر دیکھا سکتے ہو تو جو تصاویر اُس نے دیکھائیں نہایت اعلیٰ تھیں!!
    بھائی اگر تمہیں بھی بلاگ لکھنا آ گیا ہے تو جان لو ہم لوگ یا کم از کم اتنی “اعلٰی “ تخلیق کو سمجھنے سے قاصر ہیں لہذا زمانہ “۔۔۔۔۔۔“ کی طرح کی پوسٹ سے نوازیں! عین نوازش ہو گی۔

ایک تبصرہ شائع کریں

براہ کرم تبصرہ اردو میں لکھیں۔
ناشائستہ، ذاتیات کو نشانہ بنانیوالے اور اخلاق سے گرے ہوئے تبصرے حذف کر دئیے جائیں گے۔