ہفتہ، 4 جون، 2011

فرائیڈ بھنڈی توری

ارسال کردہ از Muhammad Shakir Aziz بوقت 10:37 AM ,
دوپہرکا وقت ہے اور سالن میں کل کے پکے ہوئے آلو بینگن کے علاوہ کچھ نہیں۔ اور ایک سائیڈ پر بھنڈی توری پڑی نظر آجائے، تو آپ کو بھی چاہیے کہ ہماری طرح بقلم خود بھنڈی توری کو فرائی کریں اور اس کے ساتھ روٹی نوش فرمائیں۔
اجزاء: بھنڈی توری دس بارہ عدد، پیاز دو سے تین درمیانے، گھی حسب ضرورت، کالی مرچ اور نمک حسب ذائقہ
طریقہ: بھنڈی توری کو کاٹ لیں پیار کو چھیل کر کاٹ لیں۔ ایک عدد برتن میں گھی کو کڑکڑائیں اور دونوں چیزیں اس میں ڈال کر ہلکی آنچ پر رکھ دیں۔ دس پندرہ منٹ تک انتظار کریں جب پیاز سنہری ہونے لگے تو اس کو اتار لیں۔ زائد گھی کو الگ کرلیں اور نمک و کالی مرچ چھڑک کر نوش فرمائیں۔ انتہائی مزیدار ہوگا (اگر میری طرح نمک زیادہ نہ ہوگیا تو)۔
یہ دیکھیں میری ڈش دور سے ہی کتنی لذیذ لگ رہی ہے۔


Back Top

8 تبصرے:

  1. تلی ہوئی بھنڈی توری ساتھ تلے ہوئے پياز اور ٹماٹر ۔ ميرا خيال ہے يہی کچھ ہوتا ہے ۔ ميں مزے سے کھاتا ہوں ۔ بيگن آلو کا نام سُن کر ميری بھوک رفو چکر ہو جاتي ہے مگر کھا ليتا ہوں

    پچھلے ايک ہفتہ ميں آپ کی بہن صاہبہ کے بلاگ پر تين بار تبصرہ لکھ کر شائع کرنے ميں ناکام رہا ہوں ۔ سيکيورٹی ليٹرز لکھنے کا خانہ ہی نظر نہيں آتا

  2. واہ صاحب مزہ آگیا

  3. ممکن ہے یوں ہی ہو جیسے آپ نے بتایا ہے۔ مگر پلاسٹک اور ایلومینیم جسے پاکستان میں حرف عام میں "سلور" کہا ۔
    جاتا ہے اسے استعمال کرنے سے پرہیز کریں۔

    دیکھنے میں تو بھنڈی خوب معلوم پڑتی ہے ویسے یہ کتنے افراد کا کھانا ہے؟ کہ ہمارے ہاں تو دو نوالوں میں ختم۔

  4. آپ نے کلوز اپ موڈ میں تصویر نہیں کھینچی اس لیے کچھ غیر واضح نظر آ رہی ہے۔ پچھلے دنوں میں نے بھی بھنڈی پکائی اور اس میں ٹکا کے پیاز اور ٹماٹر ڈالے۔ واہ جناب مزا آ گیا اس دن

  5. شکر ہے سیاست کی خبروں سے نکل کر کچھ کھانے کو تو ملا۔۔۔۔بہت خوب شاکر صاحب

  6. پاکستان میں بھنڈی بہت شوق سے کھاتا تھا ،لیکن یہاں کی بھنڈی ہی عجیب ہے کھانے کا دل نہیں کرتا ، جس دن بھنڈٰ پکی ہو اس دن فرج میں کچھ اور تلاشنے کے چکر میں ہوتا ہون

  7. urdu mai tabsara kaisay likha ja sakta hai :$

  8. سائیڈ بار سے اردو انسٹالر ڈاؤنلوڈ کرکے انسٹال کرلیں۔ پھر اردو کی بورڈ سے اردو ٹائپ ہوسکے گی۔

ایک تبصرہ شائع کریں

براہ کرم تبصرہ اردو میں لکھیں۔
ناشائستہ، ذاتیات کو نشانہ بنانیوالے اور اخلاق سے گرے ہوئے تبصرے حذف کر دئیے جائیں گے۔